October 21, 2020

پاکستان تحریکِ انصاف کے برسر اقتدار آنے کے بعد میڈیا اور اظہار رائے کی آزادی پر پابندی انتہا کو پہنچ گئی ہے: پی ایف یو جے

پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹ کی فیڈرل ایگزیکٹو کونسل نے پاکستان میں اظہار رائے اور میڈیا پر پابندیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ اپنی اس میڈیا دشمنی کی روش  کو ترک کرے۔  پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس کی ایگزیکٹو کونسل کا اجلاس کوئٹہ میں شہزادہ ذوالفقار کی صدارت میں منعقد ہوا۔

تین روزہ اجلاس کے اختتام پر جاری کردہ اعلامیے کے مطابق اجلاس میں حکومت اور میڈیا مخالف طاقتوں  کی جانب سے آزادی اظہار اور میڈیا کے خلاف منظم کاروائیوں پر بات کی گئی۔ اعلامیہ میں کہا گیا کہ  غیر اعلانیہ سینسر شپ ،مالکان کو دھمکیوں و مالی مشکلات، اور صحافیوں کے اغوا جیسے حربے استعمال کر کے میڈیا کے لیے مسائل پیدا کئے جا رہے ہیں۔ حکومت کی جانب سے میڈیا ہاؤسز کے واجبات کی ادائیگیوں میں رکاوٹیں پیدا کی گئی جس کی وجہ سے میڈیا مالکان نے وسیع پیمانے پر ناصرف اپنے اداروں میں سے کارکنان کی چھانٹیاں کی بلکہ ملازمین کی تنخواہوں پر کٹوتی اور ادائیگیوں میں بھی تاخیر شروع کر دی۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ جب صحافی ان ناانصافیوں کے خلاف سڑکوں پر آئے تو ان کے ساتھ حکومت نے ناصرف آمرانہ سلوک کیا بلکہ حکومت نے میڈیا کے لیے مالی مشکلات کھڑی کرنے کے ساتھ ساتھ  میڈیا کی مائیکرو مینجمنٹ بھی شروع کر رکھی ہے جس کے لیے میڈیا ایڈوائس کے ساتھ ساتھ  معلوم اور نامعلوم ٹیلیفون کالز کا سہارا لیا جا رہا ہے۔ اور ان حکومتی اقدامات سے جس قسم کی سینسر شپ اس دور میں دیکھنے میں آرہی ہے اس کی پاکستان کی تاریخ میں ڈکٹیٹر شپ کے ادوار میں بھی کوئی مثال نہیں ملتی۔

اعلامیہ کے مطابق ریاست پاکستان کی جانب سے آئین پاکستان کے آرٹیکل 19 کی خلاف ورزیاں معمول کی بات بن چکی ہیں ۔ اور اجلاس میں میڈیا کی اس بدحالی کی ساری ذمہ داری پاکستان تحریکِ انصاف حکومت پر ڈالی گئی ہے۔  فیڈرل ایگزیکٹو کونسل کی جانب سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت اپنی میڈیا مخالف روش کو ترک کرے اور میڈیا کی تنظیموں اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کے ساتھ بیٹھ کر معاملات پر بات چیت اور سمجھوتہ کرے۔ اور پی ٹی آئی اپنے منشور کے مطابق میڈیا کی آزادی کی ضمانت دے۔

اجلاس میں سوشل میڈیا کے متعلق قواعد وضوابط بنانے اور نئے قانون کے ذریعے اسے کنٹرول کرنے کے ساتھ ساتھ خواتین صحافیوں کو آن لائن ہراساں کرنے کی بھی سخت مذمت کی گئی۔
اجلاس میں اس عزم کا اعادہ کیا گیا کہ میڈیا اور اظہار رائے کی آزادی کے لیے جدو جہد جاری رکھی جائے گی۔

Written by

Muhammad Arslan is a journalist and a team member of Media Matters for Democracy. He writes regularly on issues related to media freedom, regulation, and digital rights.

No comments

leave a comment